Search This Blog

Thursday, January 11, 2024

حضرت علی رضی اللہ عنہ کے 20 ارشادات

KHaakii Writes
حضرت علی رضی اللہ عنہ 

مسلمانوں کے چوتھے خلیفہ ، امیرُ المؤمنین حضرتِ مولیٰ علی شیرِخُدا رضی اللہ عنہ مکہ شریف میں پیدا ہوئے۔ آپ کی والدہ حضرت بی بی فاطمہ بنتِ اَسَد رضی اللہ عنہا نےآپ کا نام ’’حیدر ‘‘رکھا ، والِد نے آپ کا نام’’علی‘‘ رکھا اور حُضور صلی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلم نے آپ کو’’ اَسَدُ اللہ‘‘ کے لقب سے نوازا ۔

آپ کے بے شمار ارشادات میں سے 20 ارشادات:

1. جنت کے دروازے کے قریب ایک درخت ہے اس کے نیچے سے دو چشمےنکلتے ہیں مومن وہاں پہنچ کر ایک چشمے میں غسل کرے گا اس   سے اس کا جسم پاک و صاف ہوجائے گا اور دوسرے چشمہ کا پانی پیئے گا اس سے اس کا باطن پاکیزہ ہوجائے گا پھر فرشتے جنت کے دروازے پر ( اس کا )استقبال کریں گے ۔

(تفسیرکبیر ، پ 24 ،  الزّمر ، تحت الآیۃ : 73 ، 9 / 479- 480 ، تفسیر   خازن ، 4 / 64-63   ملتقطا)


2. عمل سے بڑھ کر اُس کی قبولیت کا اہتمام کرو ، اِس لئے کہ پرہیزگاری کے ساتھ کیا گیا تھوڑا عمل بھی بہت ہوتا ہے اور جو عمل مقبول ہو جائے وہ کیسے تھوڑا ہو گا؟

(کنزالعمال ، جز : 1 ، 2 / 278 ، حدیث : 8492)


 3. ہر وہ دن جس میں اللہ پاک کی نافرمانی نہ کی جائے ہمارے لئے عید کا دن ہے۔

(قوت القلوب ، 2 / 38)


4. دو دوست مومن اور دو دوست کافر ، مومن دوستوں میں  ایک مرجاتا ہے تو بارگاہِ الٰہی میں عرض کرتا ہے یارب فلاں مجھے تیری اور تیرے رسول کی فرمانبرداری کا اور نیکی کرنے کا حکم کرتا تھا اور مجھے برائی سے روکتا تھا اور خبر دیتا تھا کہ مجھے تیرے حضور حاضر ہونا ہے ، یارب اس کو میرے بعد گمراہ نہ کر اور اس کو ہدایت دے جیسی میری ہدایت فرمائی اور اس کا اِکرام کر جیسا میرا اِکرام فرمایا ، جب اس کا مومن دوست مرجاتا ہے تو اللہ پاک دونوں کو جمع کرتا ہے اور فرماتا ہے کہ تم میں ہر ایک دوسرے کی تعریف کرے تو ہر ایک کہتا ہے کہ یہ اچھا بھائی ہے ، اچھا دوست ہے ،  اچھا رفیق ہے۔ اور دوکافر دوستوں میں سے جب ایک مرجاتا ہے تو دعا کرتا ہے ، یارب فلاں مجھے تیری اور تیرے رسول کی فرماں برداری سے منع کرتا تھا اور بدی (یعنی برائی ) کا حکم دیتا تھا ، نیکی سے روکتا تھااور خبر دیتا تھا کہ مجھے تیرے حضور (یعنی تیری بارگاہ میں) حاضرہونا نہیں ، تو اللہ پاک فرماتا ہے کہ تم میں سے ہر ایک دوسرے کی تعریف کرے تو ان میں سے ایک دوسرے کو کہتا ہے بُرا بھائی ، بُرا دوست ، بُرا رفیق۔

( تفسیرخزائن العرفان ، پ25 ، الزخرف ، تحت الآیۃ : 66)


5. میں تم پر دو چیزوں سے بہت زیادہ خوف زدہ رہتا ہوں :

(1)خواہش کی پیروی

(2)لمبی امیدیں

(الزہد لابن المبارك ، 1 / 86 ، رقم : 255)


6. جو شخص یہ گمان رکھتا ہے کہ نیک اعمال اپنائے بغیر جنت میں داخل ہو گاتو وہ جُھوٹی اُمّید کا شکار ہے۔

(ایہا الولد ، ص11)


7. خرچ کرو ، دیکھاوا(Show Off) نہ کرو اورخودکو اس لئے بلند نہ کرو کہ تمہیں پہچانا جائے اور تمہارا  نام ہو بلکہ چھپے رہواور خاموشی اختیار کرو ، سلامت رہو گے۔           (احیاء العلوم ، 3 / 339


8. انسان کا قد 22سال جبکہ عقل 28 سال کی عمر تک بڑھتی ہے ، اس کے بعد مرتے دم  تک تجرِبات کاسلسلہ رہتا ہے۔

(الکواکب الدریۃ ، 1 / 102)


9. گناہوں کی نحوست سے عبادت میں سستی اور رزق میں تنگی آتی ہے۔

(طبقات الصوفیاء ، 1 / 106)


10. بندہ بے صبری کر کے اپنے آپ کو حلال روزی سے محروم کر دیتا ہے اور اس کے باوجود اپنے مُقَدَّر سے زیادہ حاصل نہیں کر پاتا۔

(المستطرف ، 1 / 124)


11. جس “ تکلیف “ کے بعد “ جنت “ ملنے والی ہو وہ “ تکلیف “ نہیں اور جس “ راحت “ کا انجام “ دوزخ “ پرہو وہ “ راحت “ نہیں۔

(المستطرف ، 1 / 140)


12. اللہ پاک کے گمنام بندوں کے لیے خوشخبری ہے!وہ بندے جوخود تولوگوں کو جانتے ہیں لیکن لو گ انہیں نہیں پہچانتے ، اللہ کریم نے(جنت پرمقررفرشتے) حضرت رِضوان  علیہ السّلام  کواُن کی پہچان کرادی ہے یہی لوگ ہدایت کے روشن چراغ ہیں اور  اللہ پاک نے تمام تاریک فتنے اِن پر ظاہر فرما دئیے ہیں۔ اللہ پاک اِنہیں اپنی رحمت (سے جنت) میں داخل فرمائے گا۔ یہ شہرت چاہتے ہیں نہ ظلم کرتے ہیں اور نہ ہی ریا کاری میں پڑتے ہیں۔

(الزہد لہناد ، 2 / 437 ، حدیث : 861 )


13. جب تم کسی چیز کو حاصل کرنا چاہو تو پھر اُس میں ایسے لگ جاؤ کہ بس ہر وقت اسے حاصل کرنے کی کوشش کرتے رہو۔

(تعلیم المتعلم ، ص109)


14. علم خزانہ ہے اور سُوال کرنا اس کی چابی ہے ، اللہ پاک تم پر رحم فرمائے سُوال کیا کروکیونکہ اس (سوال کرنے کی صورت ) میں چار افراد کو ثواب دیا جاتا ہے۔ سُوال کرنے والے کو ، جواب دینے والے کو ، سننے والے اوران سے مَحبّت کرنے والے کو۔

(مسندالفردوس ، 2 / 80 ، حدیث : 4011)


15. تین عمل مشکل ہیں :

(1)اپنی جان کا حق ادا کرنا

(2)ہر حال میں اللہ پاک کا ذکرکرتے رہنا 

(3)اپنے ضرورت مند مسلمان بھائیوں سے مالی تعاون کرنا۔

( حلیۃ الاولیاء ، 1 / 126)


16. تین چیزیں حافظتیز اور بلغم دور کرتی ہیں۔

(1)مسواک

(2)روزہ  

(3)قرآنِ پاک پڑھنا

(احیاء العلوم ، 1 / 364)


17. جو بغیر علم کے لوگوں کو فتویٰ دے آسمان و زمین کے فرشتے اس پر لعنت کرتے ہیں۔

( المستطرف ، 1 / 39)


18. مظلوم کے ظالم پر غلبہ کا دن (یعنی قیامت کا دِن)ظالم کے مظلوم پر غلبہ کے دن سے زیادہ سخت ہے۔

( المستطرف ، 1 / 186)


19. تھوڑی چیز دینے سے شرم نہ کرو کیونکہ دینے سے محروم رہنا اس سے بھی تھوڑا ہے۔

( المستطرف ، 1 / 283)


20. میری 5 باتیں یادرکھو. اگر تم اُونٹوں پر سوار ہو کر انہیں تلاش کرنے نکلوگے تواُونٹ تھک جائیں لیکن یہ باتیں نہ مل پائیں گی :

(1) بندہ صرف اپنے ربِّ کریم سے امید رکھے

(2) اپنے گناہوں کی وجہ سے ڈرتا رہے

(3)جاہل “ علم “ کے بارے میں سوال کرنے سے نہ شرمائے۔

(4)اور اگر عالم کو کسی مسئلے کا علم نہ ہو تو (ہر گزنہ بتائے اورلاعلمی کا اظہار اورصاف انکار کرتے ہوئے) “ وَاللہُ اَعْلَمْ یعنی اللہ پاک سب سے زیادہ علم والاہے۔ ‘‘ کہنے سے نہ گھبرائے

(5) ایمان میں صبرکی وہ حیثیت ہے جیسی جسم میں سر کی ، اُس کا ایمان(کامل)نہیں جو بے صبری کا مظاہر ہ کرتا ہے

(شعب الایمان ، 7 / 124 ، حدیث : 9718 بتغیرقلیل)


Please For More Urdu Quotes Click Here 

1 comment:

Hot Posts

Featured

KHaakii Writes

Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Vestibulum rhoncus vehicula tortor, vel cursus elit. Donec nec nisl felis. Pellentesque ultrices sem sit amet eros interdum, id elementum nisi ermentum.Vestibulum rhoncus vehicula tortor, vel cursus elit. Donec nec nisl felis. Pellentesque ultrices sem sit amet eros interdum, id elementum nisi fermentum.




Contact Us

Name

Email *

Message *